اللہ تعالیٰ قرآن میں غور و فکر کی دعوت دیتا ہے۔

    قرآنی فیصلے

  • اَفَلَا يَتَدَبَّرُوْنَ الْقُرْاٰنَ ۭوَلَوْ كَانَ مِنْ عِنْدِ غَيْرِ اللّٰهِ لَوَجَدُوْا فِيْهِ اخْتِلَافًا كَثِيْرًا (سورہ نساء:82)
  • ’’ کیا یہ لوگ قرآن میں غور نہیں کرتے؟ اگر یہ اللہ کے سواکسی اور کی طرف سے ہوتا تو یقینا وہ ً اس میں بہت اختلاف پاتے ‘‘۔
  • كِتٰبٌ اَنْزَلْنٰهُ اِلَيْكَ مُبٰرَكٌ لِّيَدَّبَّرُوْٓا اٰيٰتِهٖ وَلِيَتَذَكَّرَ اُولُوا الْاَلْبَابِ (سورہ ص:29)
  • ’’(یہ) کتاب جو ہم نے تم پر نازل کی ہے بابرکت ہے تاکہ لوگ اس کی آیتوں میں غور کریں اور تاکہ اہل عقل نصیحت پکڑیں‘‘۔
  • اَفَلَا يَتَدَبَّرُوْنَ الْقُرْاٰنَ اَمْ عَلٰي قُلُوْبٍ اَقْفَالُهَا (سورہ محمد:24)
  • ’’بھلا یہ لوگ قرآن میں غور نہیں کرتے یا (ان کے) دلوں پر قفل لگ رہے ہیں‘‘۔