رقم کا اصل مالک قرض یا ادھار دینے والا لہٰذا رقم کا مالک جب اپنے قابل زکوٰۃ اثاثوں کا حساب کرے گا تو اس ادھار دی گئی رقم کو بھی ساتھ شامل کر کے اس میں سے زکوٰۃ نکالے گا کیونکہ وہ اس رقم کا اصل مالک عارضی طور پر اس نے یہ رقم کسی کو قرض دی ہے جبکہ مقروض شخص بھی اپنے اثاثوں کا حساب کر کے اس ادھار لی گئی رقم کو منفی کرکے حساب لگائے گا.
لہٰذا زکوٰۃ رقم کے اصل مالک ہی ادا کرنی ہے.